قرآن کیا ہے:

قرآن حکیم خداوند متعال کی طرف سے ایسا معجزہ ہے جو حضور سرور کائنات کے دل پر اترا جو ہر عبد خدا کے لئے ہدایت ہے۔جیسا کہ سورہ الحمد جوکہ خلاصہ قرآن ہے خدا کی حمد و ثناکے ساتھ ساتھ جو ہدف مقصود ہے، صراط مستقیم یعنی خدائی انعام یافتہ بندوں کا راستہ نہ کہ گمراہوں کا راستہ جن پر خدا کا غضب ہے۔نتیجہ یہ ہوا کہ قرآن حکیم جو مکمل ضابطہ حیات ہے کو سمجھنے کے لئے خدا نے اپنے خاص بندوں کی اطاعت کو تمام امت کے لئے فرض کیا ہے۔اور از خود ایسا بند و بست کیا ہے تاکہ میرے بندے قرآن و سنت کو سمجھ سکیں اور گمراہی سے بچ سکیں۔   

قرآن حکیم ایسی حکمت والی کتاب ہے جودنیا میں سب سے ذیادہ پڑھی بھی جاتی ہے اور سنی بھی جاتی ہے۔

قرآن کو سمجھنا :

            کیا وہ قرآن پر غور نہیں کرتے یا ان کے دلوں پر مہریں لگ چکی ہیں (القرآن 47:24)

عربی زبان اور اس کے الفاظ کے مخارج سے نابلدی کے باعث اکثر غیر عرب اقوام قرآن کی عبارتوں کو غلط معانی کے ساتھ پڑھتے ہیں ۔یہ بات اہمیت کی حامل نہ ہوتی اگر خود کلام الہی میں ان الفاظ میں تنبیہ نہ کی جاتی :

ورتل القرآن ترتیلا

 

یعنی قرآن کو ٹھہر ٹھہر کر (صحیح مخارج کے ساتھ) پڑھو